پاک فوج میں پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کے آرمی چیف کی تعیناتی سے متعلق بیان پر شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے، آئی ایس پی آر

ISPR Logo Photo By Twitter ISPR 640x480
پاکستانی مسلح افواج کا مونوگرام۔ فوٹو: ٹویٹر/ائی ایس پی آر

راولپنڈی: پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ترجمان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کے آرمی چیف تعیناتی سے متعلق نامعقول بیان پر پاک فوج میں اس وقت شدید غم وغصہ پایا جاتا ہے۔
مردان ٹائمز کے مطابق پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا کہ پاکستان آرمی میں عمران خان کی فیصل آباد میں جلسے میں پاک فوج کے سینئر قیادت کے بارے میں دیے گئے نامعقول، غیرضروری اور ہتک آمیز بیان پر شدید غم و غصہ پایا جا تا ہے۔
اس حوالے سے آئی ایس پی آر نے اپنے ایک تازہ ترین بیان میں کہا ہے کہ افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ پاک فوج کی اعلیٰ قیادت کو ایک ایسے وقت میں بدنام اور کمزور کرنے کی کوشش کی گئی ہے جب یہ ادارہ آئے روز پاکستانی عوام کی سلامتی اور تحفظ کے لیے جانیں دے رہا ہے۔
آئی ایس پی آر کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ پاکستانی فوج کے آرمی چیف کی تقرری، جس کے لیے آئین میں طریقہ کار واضح طور پر بیان کیا گیا ہے، پر تنازعات کو ہوا دینے کی کوشش کرنے والے سینئیر سیاستدانوں کا یہ طرز عمل انتہائی افسوس ناک اور مایوس کن ہے۔
آئی ایس پی آر نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ پاکستان کی فوج کی سینئر قیادت کی اہلیت اور حب الوطنی اُن کی کئی دہائیوں پر محیط بے داغ اور شاندار عسکری خدمات سے واضح طور پر عیاں ہے۔
یہ خبر بھی پڑھیں: پاک فوج میں پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کے آرمی چیف کی تعیناتی سے متعلق بیان پر شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے، آئی ایس پی آر
آئی ایس پی آر نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ پاک فوج کی سینئیر قیادت پر سیاستدانوں کی طرف سے سیاست کرنا اور آرمی چیف کے انتخاب کے عمل کو غیرضروری طور پرسیاسی اور متنازع بنانا نہ تو ریاست پاکستان کے مفاد میں ہے اور نہ ہی ادارے کے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ پاک فوج اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کی پاسداری کے لیے اپنے عزم کا اعادہ کرتی ہے۔
واضح رہے کہ اس سے ایک دن پہلے فیصل آباد میں پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان نے جلسے عام سے خطاب کے دوران کہا تھا کہ آصف زرداری اور نواز شریف اپنا فیورٹ آرمی چیف لے کر آنا چاہتے ہیں کیونکہ انھوں نے پیسا چوری کیا ہوا ہے، انھوں نے حکومتی اتحاد کے بارے میں کہا کہ یہ ڈرتے ہیں کہ یہاں کوئی تگڑا اور محب وطن آرمی چیف آگیا تو وہ ان سے پوچھے گا، اس ڈر سے یہ حکومت میں بیٹھے ہیں کہ اپنے فیورٹ آرمی چیف کا تقرر کریں گے۔
فیصل آباد میں جلسہ عام سے خطاب کے دوران کہا تھا کہ ‘کیا آرمی چیف ان سے این او سی لے کر بنائیں گے، یہ لوگ سیکیورٹی رسک ہیں، یہ دو لوگ ملک کے غدار ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ ملک کی تقدیر کو کسی صورت ان کے ہاتھ میں نہیں ہونی چاہیے۔ جلسہ عام سے خطاب کے دوران عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ ‘اس ملک کا آرمی چیف میرٹ پر ہونا چاہیے، جو میرٹ پر ہو اس کو آرمی چیف بننا چاہیے، کسی کی پسند کا آرمی چیف نہیں ہونا چاہیے۔’

Related Posts