عائشہ گلالئی کی جانب سے عمران خان کے خلاف بغاوت کے مقدمہ کی درخواست جمع

Aisha Gulalai Photo Twitter 640x480
پاک فوج کے خلاف بیانات دے کر عمران خان بیرونی اجنڈے پر عمل کررہا ہے۔ فوٹو: ٹویٹر

اسلام آباد: قومی اسمبلی کی سابق رکن عائشہ گلالئی نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف بغاوت کے مقدمہ کی درخواست دیدی۔
مردان ٹائمز کو موصول ہونے والی تازہ ترین خبروں کے مطابق پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر قومی اسمبلی کے لئے منتخب ہونے والی رکن عائشہ گلالئی نے پی ٹی آئی چیرمین عمران خان کے خلاف اسلام آباد تھانہ سیکرٹریٹ میں بغاوت کے مقدمہ کے اندراج کی درخواست جمع کرا دی ہے۔
عائشہ گلالئی نے درخواست دینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف اور حصوصی طور پر عمران خان کی طرف سے پاکستان کی نظریاتی اور جغرافیائی حدود کے محافظوں کے خلاف مہم چلائی جارہی ہے۔
عائشہ گلالئی نے مزید کہا کہ ایک طرف پاک فوج پاکستان کے خلاف ہونے والی سازشوں کا مقابلہ کرہی ہے تو دوسری طرف پی ٹی آئی چیرمین عمران خان بیرونی ایجنڈے پر پاکستان فوج کے خلاف پروپیگنڈا کررہے ہیں۔
سابق قومی رکن عائشہ گلالئی نے میڈیا سے گفتگو کے دوران مزید کہا کہ میں اپنے سر پر کفن باندھ کر پاکستان کیلئے نکلی ہوں، انھوں نے کہا کہ میرا گھر پشاور ہے اور وہاں پی ٹی آئی کی حکومت ہے۔ عائشہ گلالئی نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے مجھ پر حملہ کیا، پی ٹی آئی اب سیاسی جماعت نہیں بلکہ ایک مافیا بن چکی ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ میرا ایک سادہ سا سوال ہے کہ جب الطاف حسین پر پابندی لگ سکتی ہے تو پی ٹی آئی پر کیوں نہیں۔
عائشہ گلالئی نے مزید کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان معصوم نوجوانوں اور لوگوں کو اکسا رہا ہے کہ پاکستانی فوج کے ساتھ دست و گربیان ہوجائیں، انھوں نے مزید کہا کہ خدانخواستہ اگر فوج کمزور ہوگئی تو ملک کو ٹکڑوں ہونے سے کون بچائے گا۔ انھوں نے کہا کہ عمران خان کا کل اثاثہ جو اس کے بچے ہیں وہ پاکستان سے باہر ہیں۔
سابق رکن قومی اسمبلی عائشہ گلالئی نے چیف جسٹس آف پاکستان سےدرخواست کی اور کہا کہ اس وقت پاکستان کے حالات بہت سنجیدہ ہو رہے ہیں وہ معاملات کا نوٹس لیں۔ انھوں نے کہا کہ سپریم کورٹ سے کہتی ہوں علی وزیر نے اتنا بڑا جرم نہیں کیا جتنا عمران خان نے پاکستانی عوام کے ساتھ کیا ہے۔

Related Posts