پولیو وائرس: پاکستان کے شمالی وزیرستان میں مزید 2 پولیو کیسز سامے آگئے

Polio vaccination to a child Photo By UNICEF
ایک بچے کو پولیو سے بچاؤ کی ویکسین پلائی جارہی ہے۔ فوٹو: یونیسف/زیدی

شمالی وزیرستان: خیبر پختونخوا کے ضلع شمالی وزیریستان سے ایک بچی اور بچے میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے.
مردان ٹائمز کے مطابق وزارت صحت کے ترجمان نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا کے ضلع شمالی وزیرستان میں مزید دو بچوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے. ترجمان نے مزید کہا کہ شمالی وزیرستان سے رپورٹ ہونے والے جن بچوں میں پولیو کی علامات پائی گئیں ان میں ایک بچی اور ایک بچہ شامل ہے. وزارت صحت کے ترجمان نے کہا کہ پولیو وائرس سے متاثر ہونے والی دونوں بچوں کی عمریں ڈیڑھ ڈیڑھ سال ہیں۔
وزارت صحت کے ترجمان نے میڈیا کو اس حوالے سے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ رپورٹ ہونے والے دونوں کیسز کا تعلق میر علی سے ہے. انھوں نے کہا رواں سال یعنی 2022میں پاکستان میں مجموعی طور پر 6 پولیو کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور یہ سب کے سب مثبت کیسز کا تعلق خیبرپختونخوا کے ضلع شمالی وزیرستان سے ہیں۔
اُدھر وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے اپنے ایک تازہ ترین بیان میں‌ تمام والدین سے اپیل کی ہے کہ پولیو وائرس سے دو ممالک زیادہ متاثر ہوئے ہیں جن میں سے پاکستان اور افغانستان شامل ہیں. انھوں نے کہ اس وقت پاکستان اور افغانستان میں بیک وقت پولیو سے بچاو کی ویکسین کا مہم 23 سے 27 مئی تک جاری ہے اور اس مہم میں کروڑوں بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جارہے ہیں. انھوں نے والدین سے کہا کہ اپنے پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو عمر بھر کی معزوری سے بچانے کیلئے پولیو سے بچاؤ کے قطرے ضرور پلائیں. وفاقی وزیر نے کہا کہ یہی معصوم بچے ہمارے ملک کا روشن مستقبل ہیں اور ہم ان بجوں کو معذور ہوتا نہیں دیکھ سکتے. وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ موجودہ حکومت نے پولیو کے خاتمے کا پختہ عزم کر رکھا ہے۔
اپنے بیان میں وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ خیبرپختونخوا کے جنوبی اضلاع جن میں جنوبی وزیرستان، شمالی وزیرستان، بنوں، ڈی آئی خان، ٹانک اور لکی مروت شامل ہیں پولیو وائرس کے لئے انتہائی حساس ہیں. وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے کہ پولیو سے متاثرہ تمام بچوں کو حکومت کی جانب سے تمام ممکنہ بحالی تعاون فراہم کیا جا رہا ہے.

Related Posts