پی ٹی آئی رہنماوں کے خلاف آرٹیکل چھ کے تحت کاروائی کے لئے کابینہ کمیٹی تشکیل

Article 6 against PTI Leadership 640x480
کابینہ اجلاس میں پی ٹی آئی قیادت کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت کاروائی کا فیصلہ۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں حکومت نے پی ٹی آئی قیادت کے خلاف آرٹیکل چھ کے تحت کارائی کےلئے ایک کابینہ کمیٹی تشکیل دے دی ہے، جبکہ کابینہ ارکان نے اس حوالے سے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے آئین کی بالادستی قائم ہوگی۔
مردان ٹائمز کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے خلاف گھیرا مزید تنگ ہوتا جا رہا ہے اور اس حوالے سے اسلام آباد میں وزیراعظم کی صدارت میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اس اہم اجلاس میں پاکستان کے وزیراعظم شہباز شریف جب اجلاس میں پہنچے تو انہوں نے کابینہ کے تمام وزراء سے مصافحہ کیا۔
اس کے بعد اجلاس کی باقاعدہ کاروائی شروع ہوئی تو اس دوران کابینہ ارکان نے وزیراعظم شہباز شریف کو آئی ایم ایف کے ساتھ کامیاب مذاکرات پر مبارک باد دی۔ اجلاس کے دوران وزیراعظم شہباز شریف نے کابینہ ارکان سے کہا کہ اللہ کرے کہ آئی ایم ایف کے ساتھ یہ آخری معاہدہ ثابت ہوجائے۔
اسلام آباد میں کابینہ اجلاس میں گزشتہ حکومت کے ڈپٹی اسپیکر رولنگ کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلہ پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس دوران وفاقی کابینہ اور اس کے اتحادی جماعتوں کے تمام ارکان نے متفقہ طور پرسپریم کورٹ کے اس فیصلے کو سراہتے ہوئے اسے تاریخی قرار دیا۔ اسلام آباد میں کابینہ کے اس اہم اجلاس میں تمام ارکان نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے آئین کی بالادستی قائم ہوگی اور بول بالا ہوگا۔
وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں کہا کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں تمام ارکان نے متفقہ طور پر سپریم کورٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کیا اور اس حوالے سے ایک قرارداد منظور کی۔ انھوں نے مزید کہا کہ اس فیصلے میں سپریم کورٹ کی جانب سے اٹھائے گئے نکات پر عمل درآمد اور آرٹیکل 6 (سنگین غداری) کے تحت کارروائی کے لیے کابینہ کی خصوصی کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔
وفاقی وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے میڈیا سے گفتگو کے دوران مزید کہا کہ وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ کی سربراہی میں قائم اس خصوصی کمیٹی میں وزیر داخلہ، اطلاعات، وفاقی وزرا اور تمام اتحادی جماعتوں کے نمائندگی شامل ہوگی۔ انھوں نے اس حوالے سے مزید کہا کہ کابینہ کی یہ کمیٹی آئیندہ اجلاس میں اپنی تجاویز پیش کرے گی۔
وفاقی وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے میڈیا سے گفتگو کے دوران مزید کہا کہ کابینہ اجلاس میں قرارداد منظور کی گئی جس میں کہا گیا کہ آئین، جمہوریت، پارلیمنٹ اور عوام کے حق حکمرانی پر شب خون مارنے کا یہ سلسلہ ہمیشہ کے لیے روک دیا جائے۔ انھوں نے کہا کہ عدالتی فیصلے کی روشنی میں یہ کمیٹی اقدامات تجویز کرے گی۔
ایک صحافی نے سوال کیا کہ آرٹیکل 6 کی کارروائی کن افراد کے خلاف کی جائے گی؟ اس سوال کے جواب میں وفاقی وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ اس حوالے سے سپریم کورٹ کا عدالتی فیصلہ بہت ہی واضح ہے جس میں نام درج ہیں کہ اسپیکر، ڈپٹی اسپیکر ، صدر ، وزیراعظم نے آئینی عہدوں کی تذلیل کی ہے۔ اس بارے میں انھوں نے مزید بتایا کہ کابینہ کے تمام ارکان نے متفقہ طور پریہ فیصلہ کیا ہے کہ ہمیشہ کے لیے اس آئین شکنی و سرکشی کو ختم کرنے کےلیے کمیٹی تجویز پیش کرے گی اور کابینہ اس کی منظوری دے گی۔

Related Posts